اسلام آباد. وفاقی وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا کہ پاکستان ایٹمی ریاست ہی لیکن یہا ں نمازیوں کی حفاظت کرنا پڑتی ہی جو ہمارے لئے لمحہ فکریہ ہے کہ ہم نے کون کون سی غلطیاں کی ہیں,  ہمیں اپنا تجزیہ کرنا چاہیے.

 قومی اسمبلی کے اجلا س سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہملک کے اندر 22ہزار مدارس ہیں جو کسی نہ کسی طریقے سے دہشتگردی میں ملوث ہیں لیکن بہت سے مدارس ایسے ہیں جو ملک کی خدمت کررہے ہیں.

انہوں‌نے کہا کہ ہمارا مذہب محبت اور امن کا پیغام ہے ہمارے اندر برداشت ہونی چاہیے ہمارے پہلے بھی بہت زیادہ زخم کھائے ہیں پاکستان کا بدن زخموں سے چور چور ہے پرویز رشید پر فتوی دینے والے اسلام کی خدمت نہیں بلکہ اس کو ہوا دینے کی کوشش کی ہے ۔
 
ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ اجلاس میں سینٹ میں وزیر اطلاعات پرویز رشید کے معاملے پر بحث ہوئی اور وہاں پر معاملے طے پا گیا ہے اس معاملے کو طول دینا مناسب نہیں ہوگا ۔
 
انہوں نے کہا کہ کسی بھی مدرسے یا یونیورسٹی سے کوئی بھی طالبعلم متشدد سوچ نکتی ہے تو اس پر قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔
 
وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ پرویز رشید نے جو ۔کچھ کہا اس کا غلط مطلب لیا گیا۔