فواد چوہدری کا راہداری ریمانڈ منظور ، عدالت کا میڈیکل کرانے کا حکم

20

لاہور:لاہور کی عدالت نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری کا راہداری ریمانڈ منظور کرتے ہوئے میڈیکل کرانے کا حکم دیدیا۔بدھ کوفواد چوہدری کو لاہور کی کینٹ کچہری میں جوڈیشل مجسٹریٹ رانا مدثر کی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں پولیس نے فواد چوہدری کو اسلام آباد منتقل کرنے کے لیے راہداری ریمانڈ کی درخواست کی ،پراسیکیوشن کی جانب سے عدالت سے استدعا کی گئی کہ اسلام آباد کے تھانہ کوہسار کی پولیس نے فواد چوہدری کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے، اس لیے ملزم کو اسلام آباد منتقل کرنے کے لیے راہداری ریمانڈ دیا جائے۔

فواد چوہدری کے وکیل نے اس پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد کا 4 گھنٹے کا راستہ ہے، وہاں لے جانے کے لیے راہداری ریمانڈ کی کیا ضرورت ہے؟ یہ اسلام آباد جائیں اور وہاں جا کر فواد چوہدری کو عدالت میں پیش کر دیں، یہ 1 روزہ راہداری ریمانڈ لے کر انہیں کہیں اور لے کر جانا چاہتے ہیں۔فواد چوہدری کے وکیل نے استدعا کی کہ سفری ریمانڈ نہیں بنتا، فواد چوہدری کی ہتھکڑی کھولی جائے، دونوں ہاتھوں کی بجائے ان کے ایک ہاتھ پر ہتھکڑی لگائیں۔

عدالت نے فواد چوہدری کے وکیل کس سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ آپ فضول باتوں میں وقت ضائع کر رہے ہیں۔فواد چوہدری کے وکلاء نے استدعا کی کہ فواد چوہدری کی ہتھکڑیاں فوری کھولی جائیں، ان کی حبسِ بے جا کی درخواست ہائی کورٹ میں زیر التواہے، جب تک ہائی کورٹ کا فیصلہ نہیں آ جاتا عدالت راہداری ریمانڈ کی درخواست پر سماعت نہ کرے۔جس کے بعد جوڈیشل مجسٹریٹ نے سماعت کچھ دیر کے لیے ملتوی کرتے ہوئے فواد چوہدری کا راہداری ریمانڈ منظور کر لیا اور عدالت نے یہ حکم دیا کہ فواد چوہدری کا میڈیکل کرایا جائے، جس کے بعد انہیں اسلام آباد روانہ کیا جائے۔

پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان تحریکِ انصاف (پی ٹی آئی) کے گرفتار رہنما فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ پولیس ایسی لگائی ہے کہ جیسے میں کوئی جیمز بونڈ ہوں، میرے خلاف جو مقدمہ درج ہوا ہے اس پر فخر ہے، نیلسن منڈیلا پر بھی یہی مقدمہ تھا۔ان کا کہنا تھا کہ کہا جا رہا ہے کہ میں نے بغاوت کی، میں سابق وفاقی وزیر اور سپریم کورٹ کا وکیل ہوں، مجھے عزت و احترام کے ساتھ ٹریٹ کیا جائے۔فواد چوہدری نے مزید کہا کہ جس طرح گرفتار کیا گیا وہ مناسب نہیں تھا، مجھے یہ فون کرتے میں خود ہی آ جاتا۔

پاکستان تحریکِ انصاف (پی ٹی آئی) کے گرفتار رہنما کا یہ بھی کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن سے متعلق جو بات کی سارا پاکستان وہی بات کر رہا ہے۔اس سے قبل فواد چوہدری کو پولیس کی درجنوں گاڑیوں کے حصار میں لاہور کی عدالت میں لایا گیا۔پیشی کے موقع پر فواد چوہدری کے ہاتھوں میں ہتھکڑی لگی ہوئی تھی۔پولیس کی گاڑی سے باہر آنے پر پی ٹی آئی کے کارکنوں نے فواد چوہدری پر پھول نچھاور کیے۔اس موقع پر فواد چوہدری مسکراتے ہوئے نظر آئے۔ پنجاب پولیس کا کہنا ہے کہ فواد چوہدری کو ان کی رہائش گاہ سے گرفتار کیا گیا۔پنجاب پولیس کا یہ بھی کہنا ہے کہ فواد چوہدری تاحال پنجاب پولیس کی تحویل میں ہیں