ایف آئی اے کراچی کاکرپٹ سب انسپکٹر خدا بن گیا

175

2 بار معطل ہونے والے احمد خان میرانی نے بزنس مینوں کو بلیک میل کرنا شروع کر دیا ،ڈائریکٹر عامر فاروقی سب انسپکٹر سرپرست نکلا
منی لانڈرنگ کے کیسز میں مبینہ طور پر 5 کروڑ سے زائد کی رشوت وصولی
سینئر صحافی نے موقف لینے کیلئے رابطہ کیا تو اسکا نام بھی منی لانڈرنگ کیس میں ڈال کر طلب کرلیا
#/h#
کراچی،اسلام آباد(آن لائن)وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کا کرپٹ سب انسپکٹر خدا بن گیا ،حوالہ، ہنڈی اور منی لانڈرنگ کے کیسز میں تاجروں اور صنعت کاروں کو بلیک میل کرنا شروع کر دیا ۔ایک کیس میں مبینہ طور پر مختلف بزنس مینوں سے 5 کروڑ کی رشوت بھی لی ،رشوت کی شکایات پر سینئر صحافی نے موقف لینے کے لئے سب انسپکٹر احمد خان میرانی سے رابطہ کیا تو اس نے موقف کے بجائے سینئر صحافی کو بھی منی لانڈرنگ کیس میں ڈال کر پیر کوطلب کرلیا ۔ذرائع کے مطابق ایف آئی اے ،سٹیٹ بینک سرکل کراچی سب انسپکٹر احمد خان میرانی منی لانڈرنگ کے جھوٹے کیسز میں صنعت کاروں اور تاجروں کو بلیک میل کررہا ہے اور اس میں اسے اپنے ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ زونز عامر فاروقی کی مکمل آشیر باد حاصل ہے ،31 تاجروں اور ممتاز صنعت کاروں کو ایف آئی آر نمبر 09/2021 کے تحت نوٹسز جاری کئے اور الزام عائد کیا کہ وہ منی لانڈرنگ میں ملوث ہیں ۔جب یہ صنعت کار اور تاجر کال اپ نوٹس کے تحت پیش ہوئے تو مبینہ طور پر ان سے رشوت لی گئی جو کہ 5 کروڑ روپے سے زائد ہے اور یہ پیسہ ڈائریکٹر ایف آئی اے عامر فاروقی تک بھی پہنچایا گیا ،ایسی شکایات جب میڈیا تک پہنچیں تو روزنامہ جناح اور آن لائن نیوز نیٹ ورک کے ایڈیٹر انچیف محسن جمیل بیگ نے ان کا موقف جاننے کے لئے رابطہ کیا تو نہ صرف سب انسپکٹر احمد خان میرانی نے ہتک آمیز رویہ اختیار کیا بلکہ ان سے نمٹ لینے کی دھمکیاں بھی دیں اور حیرت آنگیز طور پر بعد میں اسی ایف آئی آر میں محسن جمیل بیگ کو بھی پیر کو ایف آئی اے سٹیٹ بینک سرکل کراچی طلب کرلیا ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب ،سندھ اور بلوچستان کی بزنس کمیونٹی کو یہ سب انسکپٹر ،ڈائریکٹر عامرفاروقی کی ملی بھگت اور آشیر باد سے بلیک میل کررہا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ عامر فاروقی کو مختلف الزامات پر سندھ بدر بھی کیا گیا تھا موصوف کا تعلق پولیس گروپ سے ہے مگر یہ اپنا سیاسی اثرورسوخ استعمال کرتے ہوئے دوبارہ سندھ میں تعیناتی کروانے میں کامیاب ہوگیا۔ ذرائع نے بتایا کہ عامر فاروقی بری شہرت کا حامل آفیسر ہے اور ایف آئی اے کے لئے بھی بدنامی کا باعث بنا ہوا ہے ،واضح رہے کہ احمد خان میرانی کرپشن کیسز میں 2 بار معطل رہ چکا ہے اور ایک ہوٹل میں خاتون کے ساتھ ریپ کیس میں پکڑا بھی گیا تھا اور اس کا نام ان ایف آئی اے کے اہلکاروں میں شامل ہے جو کہ پیپلز پارٹی دور میں بحال کر دیئے گئے تھے مگر اب سپریم کورٹ نے ان کو نکالنے کے احکامات جاری کئے ہیں ۔ذرائع سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ نیب بھی احمد خان میرانی اور عامر فاروقی کے خلاف کرپشن کی شکایت پر تحقیقات کررہا ہے اور ان کے ساتھ ساتھ ان کے عزیز واقارب کے اثاثے بھی چیک کئے جارہے ہیں کیونکہ دونوں کے خلاف کرپشن کی تحقیقات بہت زیادہ بڑھ گئیں ہیں اور بزنس کمیونٹی بھی ا ن کی بلیک میلنگ سے تنگ آئی ہوئی ہے جبکہ اب اس نے سینئر صحافیوں کو بھی بلیک میل کرنے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے تا کہ ان کے کارنامے میڈیا پر نہ آ سکیں ۔